مضمون

محسن نقوی کے قاتل نے ان کے شعر کو پیشن گوئی میں کیسے بدلا؟

محسن نقوی بن چکا تھا۔ امجد عقل روبی کے مطابق محسن نقوی نے ڈیرہ غازی خان میں آنکھ کھولی, جوانی نے انگڑائی لی تو ملتان چلا آیا اور پھر لاہور۔پھر اس کی شاعری خوشبو کی طرح سارے ملک میں پھیل گئی۔ محسن نقوی کے یومِ پیدائش پر خصوصی تحریر

مزید پڑھیے

الکیمسٹ: انسان کے باطنی سفر کی ایک جھلک اور حکمت کے موتی

پاؤلو کاہلو کا شہرہ آفاق ناول۔۔۔اس میں ایسا کیا ہے کہ چھ کروڑ کاپیاں بک چکی ہیں اور اسی زبانوں میں ترجمہ ہوچکا ہے۔ اس ناول میں زندگی کے کون سے رازہیں جن سے پاؤلو نے اٹھایا پردہ؟ انسان کے باطنی سفر کی ایک جھلک اور چند حکمت کے موتی آپ بھی سمیٹ لی جیے۔

مزید پڑھیے

برصغیر پاک و ہند میں عربی خطاطی کی روایت: ہماری تاریخی وراثت

ہندستانی خطاطی یا INDIAN CALIGRAPHY کی لگ بھگ ایک ہزار سال کی تاریخ ہے۔ بھارت میں رہنے والوں کے آباء واجداد مختلف ملکوں سے آئے تھے اسلئے وہ اپنے ساتھ مختلف تہذیبیں اور مختلف علوم و فنون لے کر آئے تھے۔ ہندستانی خطاطی بھی ایک ایسا ہی فن ہے، جواگرچہ باہر سے آیا مگربھارت میں پروان ...

مزید پڑھیے

امراؤ جان ادا :اردو کا پہلا کامیاب ناول

مرزا ہادی رسوا کا ناول" امراؤ جان ادا" کو اردو ادب کا پہلا کامیاب ناول سمجھا جاتا ہے ۔مرزا ہادی رسوا نے اسے 1899ء میں لکھا۔ اس ناول کو معاشرتی، نفسیاتی اور تاریخی ناولوں میں اہم مقام حاصل ہے اس کی اہمیت کا اندازہ اس سے بھی لگایا جاسکتا ہے کہ ایک صدی گزر جانے کے باوجود اس کو ذوق و شوق سے پڑھا جاتا ہے ۔

مزید پڑھیے

انشائیہ: جی ہاں

پنجابی لوگ اپنے مطلوب کی ایک "نکی جئی ہاں" کے بدلے جی جان وارنے کو تیار رہتے ہیں۔ جبکہ "جی سائیں" کہنے والے سرائیکی لوگ سینے یا چھاتی کو "ہاں" کہتے ہیں۔ بعض معالج یہ جملہ سن کر متحیر ہو جاتے ہیں کہ "ہاں میں درد ہے۔" درد تو واقعی "ہاں" میں ہوتا ہے، ایک "ناں" سو سُکھ ۔

مزید پڑھیے

گنجینہء نگارش۔۔۔ضلع وہاڑی کا ایک علمی و ادبی مجلہ

"گنجینہ نگارش " ایسی خوش رنگ "طلوع سحر" کی مانند ہے. جس میں مختلف رنگوں کی روشنیاں شامل ہیں. قوس و قزح کے سارے رنگ افسانوں، غزلوں، معلومات کی صورت میں بکھرے ہوئے ہیں. کالج کا مجلہ "گنجینہ نگارش" گورنمنٹ کالج وہاڑی کے علاوہ وہاڑی شہر کی پہچان بن چکا ہے.۔ یہ جریدہ گزرتے وقت کے ساتھ اپنی دلکشی میں اضافہ کر رہا ہے، یہ بہت مثبت سرگرمی ہے، جس کو جاری رہنا چاہیے۔

مزید پڑھیے

تنقید سے کیا مراد ہے؟

نقدِ ادب کے اصول کیا ہیں؟ تنقید سے کیا مراد ہے؟ ایسے سوالوں کا جواب دینے سے پہلے اس پرغور کرنے کی کوشش کرنا چاہیے کہ ادب کیا ہے؟ کیونکہ جیسے ہی ادب کے متعلق گفتگو شروع ہوگی، تنقید کے اصول خود بہ خود سامنے آتے جائیں گے۔

مزید پڑھیے

ادب اور صحافت میں کیا فرق ہے؟

مشتاق احمد یوسفی کا نام عصرِ حاضر میں ادب کا بہت بڑا نام ہے اور جناب کامران خان کا شمار ملک کے نام وَر صحافیوں میں ہوتا ہے۔ دونوں کی گفتگو برقی ذرائع ابلاغ پر موجود ہے۔ باری باری سن لیجیے۔ ادب اور صحافت میں اب جو فرق پیدا ہوگیا ہے، معلوم ہوجائے گا۔

مزید پڑھیے

رسیلی زبان اورکچھ رس بھری باتیں

ہماری قومی زبان بھی رسیلی زبان ہے۔اس میں بڑا رس ہے۔ مگر قومی زبان پر قوم کا بس نہیں۔ خود قومی زبان بھی بے بس ہوکر رہ گئی ہے۔ تعلیم اور کارِ سرکار کی زبان فرنگی زبان ہے۔ لوگ سمجھتے ہیں کہ بس اب یہی زبان ان کے بس میں ہے۔ گو کہ فرنگی زبان پر بھی پوری طرح بس نہیں چلتا، اُلٹا اسی نے لوگوں کو بے بس کر رکھا ہے۔ پر لوگوں کو سمجھا دیا گیا ہے کہ اسی زبان کو لکھنا، پڑھنا اور بولنا ہمارے لیے بس ہے۔

مزید پڑھیے
صفحہ 2 سے 77